loader
markethon

اینڈرائیڈ فون لوکیشن بند ہونے کی صورت میں آس پاس کے سمارٹ فونز سے معلومات اکٹھی کر کے گوگل کو بھیجتے ہیں۔  جس سے صارف کی لوکیشن معلوم ہو جاتی ہے ۔

صارفین کی پرائیویسی پر کام کرنے والوں کا کہنا ہے کہ یہ صارفین کے ساتھ دھوکہ ہے۔ دوسری جانب گوگل کا کہنا ہے کہ صارفین سے اکٹھی ہونے والی معلومات کو کہیں بھی محفوظ نہیں کیا جاتا اور آئندہ آنے والے سافٹ وئیر میں اس کو حل کر لیا جائے گا۔

ایک اور اہم بات یہ ہے کہ موبائل میں سم موجود نہ بھی ہو تب بھی یہ فونز معلومات اکٹھی کر کے گوگل کو بھیج رہے ہوتے ہیں ان کو روکنے کا فی الحال کوئی حل موجود نہیں ہے۔ صارفین کی پرائیویسی پر کام کرنے والی تنظیم کا کہنا ہے کہ اینڈرائیڈ فونز استعمال کرنے والے صارفین کا اپنے موبائل پر کنٹرول نہیں ہے۔

اگرچہ گوگل نے کہا ہے کہ وہ اس طریقے سے معلومات اکٹھی کرنے کو روک دیں گے لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ ایسی اور کون سی چیزیں ہیں جو سمارٹ فونز کے صارفین


کے علم میں نہیں ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *